بلوچستان حکومت ہر ضلع میں سکولوں

کے قیام پر 10 ارب روپے خرچ کرے گی۔

 کوئٹہ – بلوچستان حکومت نے نوجوانوں کو جدید معیار کی تعلیم فراہم کرنے اور انہیں مستقبل کے چیلنجز کے لیے تیار کرنے کے لیے 10 ارب روپے کی لاگت سے صوبے کے ہر ضلع میں بورڈنگ سکول قائم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ حکومت بلوچستان کے ایک عہدیدار نے اے پی پی کو بتایا کہ حکومت صوبہ کے نوجوانوں کو جدید تعلیمی سہولیات کو یقینی بنانے کے لیے ضلع کوئٹہ میں 10 اضاف ی کالجز بھی قائم کرے گی۔صوبے کے دور دراز علاقوں کے نوجوانوں کو بہترین تعلیمی سہولیات فراہم کرنے کے لیے حکومت ان کے قریبی قربت میں بورڈنگ سکول قائم کرے گی۔ بہترین تعلیمی ماحول کے علاوہ ، عہدیدار نے مزید کہا کہ ان بورڈنگ اسکولوں میں طلباء کو اچھی طرح سے لیس ہاسٹل ، کھیل اور دیگر جدید سہولیات فراہم کی جائیں گی۔ انہوں نے کہا کہ حکومت منصوبے کے مطابق صوبے میں طلباء کو بورڈنگ ، رہائش ، کتابیں اور یونیفارم مفت فراہم کرے گی۔ بلوچستان حکومت نے 100 نئے مڈل سکول قائم کرنے کا بھی منصوبہ بنایا ہےجس کے لیے سالانہ بجٹ 2021-22 میں 1500 ملین روپے مختص کیے جا رہے ہیں تاکہ صوبے میں نوجوان نسل کو آسان رسائی کے ساتھ معیاری تعلیم فراہم کی جا سکے۔ عہدیدار نے بتایا کہ حکومت نے تعلیم کے دستیاب مواقع کو بڑھانے اور صوبے کے تعلیمی اداروں میں سکول کے بچوں کو باہر لانے کے لیے 198 سکولوں کو قائم اور اپ گریڈ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔اور موجودہ سکولوں میں نئے کلاس رومز کی تعمیر ، سکولوں کی اپ گریڈیشن ، شیلٹر کم سکولوں کی تعمیر اور ان سکولوں میں جدید سہولیات کی فراہمی حکومت نے لڑکیوں کے 35 سکولوں کو اعلی معیار میں اپ گریڈ کیا تاکہ ان کے قریبی علاقوں میں طالبات کو اعلیٰ تعلیم کی سہولیات کو یقینی بنایا جا سکے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں