بلوچستان کے زرعی علاقے زیتون کی شجرکاری کیلئے موزوں ہیں،وزیراعظم عمران خان

(بامسار) وزیراعظم نے کہا ہے کہ زیتون کی شجرکاری مہم کامیاب رہی تو ملک کیلئے فائدہ ہوگا، پھلوں کے درخت کی شجرکاری کو بھی بلین ٹری منصوبے میں شامل کرلیں گے۔
نوشہرہ میں زیتون کی شجرکاری مہم کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ زیتون کی کاشت سے کسان خوشحال ہوگا، بلوچستان کے علاقے زیتون کی شجرکاری کیلئے موزوں ہیں، پاکستان کا سب سے بڑا چیلنج فوڈ سیکیورٹی ہے، رواں سال ہم نے 40 لاکھ ٹن گندم امپورٹ کی۔ انہوں نے کہا کہ جب حکومت ملی تو پاکستان کا مالیاتی خسارہ تاریخی تھا، دوسرا چیلنج غیر ملکی زرمبادلہ کے ذخائر کا ہے، تیسرا چیلنج نوجوانوں کو نوکریاں دینا ہے، روزگار کی فراہمی ہماری اولین ترجیح ہے۔ وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ زیتون کو دنیا بھر میں ایکسپورٹ کیا جا سکتا ہے، دس ارب درخت لگانا ہمارا چیلنج ہے۔
وزیر اعظم عمران خان کی جانب سے نوشہرہ میں زیتون کی شجر کاری مہم کا آغاز کر دیا گیا ہے۔ اس دوران وزیراعظم عمران خان نے نوشہرہ میں شجر کاری مہم کی تقریب سے خطاب کے دوران کہا ہے کہ پاکستان کا سب سے بڑا چیلنج فوڈ سیکیورٹی ہے، دوسرا چیلنج غیر ملکی زرمبادلہ کے ذخائر کا ہے جبکہ تیسرا چیلنج نوجوانوں کو نوکریاں دینا ہے۔ اُن کا کہنا تھا کہ جب حکومت ملی تو پاکستان کا مالیاتی خسارہ تاریخی تھا۔ وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ دنیا میں ماحولیاتی تبدیلی بڑا چیلنج بن چکی ہے، پاکستان کی برآمدات میں اضافہ اور درآمدات میں کمی ہوئی ہے۔
نوشہرہ میں وزیر اعظم عمران خان کو شجر کاری مہم سے متعلق بریفنگ بھی دی گئی۔ وزیر اعظم عمران خان کو شجر کاری مہم سے متعلق دی گئی بریفنگ میں بتایا گیا کہ زیتون کی فروغ دس بلین ٹری پلان کا حصہ ہے۔ بریفنگ میں کہا گیا کہ زیتون کی شجرکاری دس بیلین ٹری سونامی پروگرام کا حصہ ہوگی، پروگرام کے تحت ملک بھر میں موزوں مقامات پر زیتون کی شجر کاری کی جائے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں